جج کو کرسی مارنے والے وکیل کی سزا معطل، ضمانت منظور

0
83

لاہور: ہائی کورٹ نے جج کو کرسی مار کر سر پھاڑنے والے وکیل عمران منج کی سزا معطل کرتے ہوئے دو لاکھ روپے مچلکے کے عوض ضمانت منظور کرلی۔

جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں لاہور ہائیکورٹ کے دو رکنی بنچ نے عمران منج کی سزا معطل اور درخواست ضمانت کی سماعت کی۔ ہائی کورٹ نے انسداد دہشت گردی عدالت کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے عمران منج کی سزا معطل کرتے ہوئے ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دے دیا۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے ایڈووکیٹ عمران منج کو 18 سال 6 ماہ قید اور ڈھائی لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنائی تھی۔ عمران منج نے جڑانوالہ کی مقامی عدالت میں دوران بحث معمولی تلخ کلامی پر کرسی مار کر سینئر سول جج خالد محمود وڑائچ کا سر پھاڑ دیا تھا۔

عمران منج کی سزا کے خلاف وکلا نے شدید احتجاج اور ہڑتال کی تھی۔

کوئی تبصرہ نہیں