کانٹیکٹ لینس لگا کر نہانے والے شخص کی آنکھ ضائع

0
8

لندن: برطانیہ میں کانٹیکٹ لینس اتارے بغیر نہانے والا شخص اپنی دائیں آنکھ کی بینائی سے محروم ہوگیا۔

برطانوی اخبار شروپ شائر اسٹار میں شائع ہونے والے ایک کالم ’ اپنی بینائی کی لڑائی‘ میں متاثرہ مریض نے اپنی زندگی کے سب سے ہولناک حادثے کے متعلق لکھا تاکہ دیگر افراد اس تجربے سے باز رہیں اور احتیاطی تدابیر لازمی اختیار کریں۔

29 سالہ نک ہمفریز جو مذکورہ اخبار میں ملازم بھی ہیں، اس نے لکھا کہ ایک برس قبل چشمے کی اذیت سے نجات حاصل کرنے کے لیے کانٹیکٹ لینس کا استعمال شروع کیا اور شاید یہ میری زندگی کا سب سے برا فیصلہ تھا۔
ایک دن صبح اٹھنے کے بعد ورزش کے لیے جم گیا اور کسرت کرنے کے بعد قدرے جلد ہی گھر لوٹا تاکہ غسل کر کے دفتر جانے کی تیاری کر سکوں اور بغیر لینس اتارے نہانے چلا گیا۔

غسل کے بعد آنکھ میں معمولی تکلیف ہوئی لیکن اسے نظر انداز کرتے ہوئے دفتر پہنچا اور معمول کے کام جاری رکھے لیکن آہستہ آہستہ آنکھ لال ہونے لگی اور مجھے دیکھنے میں دقت محسوس ہونے لگی۔

معالجین نے اس تکلیف کو آنکھ میں الرجی سمجھا تاہم جب مکمل طبی ٹیسٹ ہوئے تو انکشاف ہوا کہ نوجوان نہانے کے دوران لینس میں پانی بھرجانے کے باعث Acanthamoeba keratitis کے مرض کا شکار ہو گئے اور بینائی سے محروم ہوگئے۔

نوجوان نے مزید لکھا کہ لینس کے استعمال سے معالج سمیت کسی نے بھی طریقہ کار سے آگاہ نہیں کیا اور نہ ہی غسل کے وقت لینس اتارنے کا مشورہ دیا تھا۔ معالجین کو علاج کے دوران تمام تر طبی معلومات مریضوں کو فراہم کرنی چاہیئے۔

واضح رہے کہ 2009 میں ہونے والی ایک تحقیق میں بھی دعویٰ کیا گیا تھا کہ معلومات کی کمی کے باعث لینس کے استعمال میں غلطی سے محض امریکا میں 20 لاکھ افراد اپنی آنکھ کو نقصان پہنچا بیٹھتے ہیں۔
\

کوئی تبصرہ نہیں