Sargaram | Newspaper

اتوار 26 مئی 2024

ای-پیپر | E-paper

اسرائیل کی غزہ کا دوسرا بڑا القدس اسپتال فوری خالی کرنے کی دھمکی

Share

اسرائیل کی جانب سے غزہ میں وحشیانہ بمباری کا سلسلہ جاری ہے اور حال ہی میں غزہ کے ترکش اسپتال میں بمباری سے تباہی دیکھنے میں آئی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق  چند روز قبل صیہونی افواج کے اسپتال پر ہونے والے تازہ حملے میں 500 سے زائد فلسطینی شہیداور 600 سے زائد زخمی ہوئے تھے جس کے بعد  اب ایک بار پھر غزہ کےترکش اسپتال میں بمباری سے تباہی  دیکھنے میں آئی ہے۔

یہی نہیں اسرائیل نے  غزہ کا دوسرا بڑا القدس اسپتال فوری خالی کرنے کی دھمکی دی ہے  اور بتایا گیا ہے کہ اسرائیل کی جانب سے غزہ کے دوسرے بڑے القدس اسپتال کو نشانہ بنائےجانے کا خطرہ ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق اسپتال کے اطراف میں اسرائیل کی وحشیانہ بمباری جاری ہے جس کے باعث اٹھنے والے بارود اور دھوئیں سے زخمیوں اور پناہ لینے والوں کا دم گھٹنے لگا ہے۔

غزہ کے القدس اسپتال میں 14 ہزار افراد موجود ہیں، بچوں اور عورتوں سے کوریڈور بھی بھرے ہوئے ہیں۔

غزہ میں 47 مساجد اور 7 چرچ بھی تباہ

غیر ملکی میڈیا کےمطابق غزہ حکومت کا کہنا ہےکہ 7 اکتوبر سے غزہ پر جاری اسرائیلی جارحیت میں 47 مساجد اور 7 چرچ بھی تباہ ہوچکے ہیں جب کہ اسرائیل فوج نے 203 اسکول اور 80 سے زائد سرکاری دفاتر کو بھی تباہ کردیا۔

اقوام متحدہ کے امدادی ادارے کا کہنا ہےکہ اتوار کے روز براستہ رفاح غزہ میں 33 ٹرک امدادی سامان لے کر داخل ہوئے ہیں جن میں پانی، کھانا اور طبی سہولیات کا سامان ہے، یہ 21 اکتوبر سے غزہ میں جانے والی امداد میں سب سے بڑی امداد ہے۔

Share this Article
- اشتہارات -
Ad imageAd image