Sargaram | Newspaper

اتوار 21 اپریل 2024

ای-پیپر | E-paper

سائفر کیس میں عدالتی فیصلے کا احترام ہے، ملک احمد.

Share

مسلم لیگ ن کے رہنما ملک محمد احمد خان نے کہا ہے کہ  ن لیگ سپریم کورٹ کے سائفر کیس فیصلے کا احترام کرتی ہے۔ 

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے ملک محمد احمد خان نے کہا کہ سپریم کورٹ کا سائفر کیس پر شاندار فیصلہ ہے، سائفر کیس پر فیصلہ سنا تو ذہن میں آیا کہ ٹرائل پر سوالات نہ اٹھیں، وزیرِ اعظم فی الفور اسمبلی توڑنے کی سفارش صدر کو بھیجتے ہیں تو وہ فوراً کر دیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ باز گشت ہے کہ جس کے حق میں فیصلہ ہو وہی لاڈلہ ہوتا ہے، ماضی کی حکومت نے سائفر کو بنیاد بنا کر سیاست کی، اسٹیبلشمنٹ کو بھی سائفر کے معاملے پر گھسیٹا گیا، سائفر کو جواز بنا کر ایک دوست ملک کے سرکاری حکام پر الزام لگائے گئے۔

 ملک محمد احمد خان کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کو بند لفافوں سے رغبت ہے چاہے بند لفافے میں 190 ملین پاؤنڈ ہی کیوں نہ ہوں، قاسم سوری نے بھی سربمہر لفافہ لہرایا۔

مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا کہ اعظم خان پر آڈیو لیکس پر ایک مقدمہ چل رہا ہے، سائفر پر کابینہ کی ایک مختصر میٹنگ کی گئی تھی، ہم معزز جج صاحبان کی مکمل تکریم کرتے ہیں، لاڈلے کی بحث ہے کہ لاڈلا کون ہے؟

ان کا مزید کہنا ہے کہ جس کے حق میں فیصلہ آجاتا ہے اسے لاڈلا کہہ دیا جاتا ہے، جب ایک سیاسی جماعت کالعدم ہوگی تو الیکشن کمیشن اسے کیسے نشان دے گا، الیکشن کمیشن آپ کے انٹرا پارٹی الیکشن پر معترض ہوئی، الیکشن کمیشن کے جائز سوالات کے جوابات نہیں دیے گئے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ کیا لیول پلیئنگ فیلڈ کے لیے آئین و قانون کی خلاف ورزی کو ساتھ ملا دیں گے،  ایک شخص نے کوئی واقعہ کیا تو کیا تحقیقات مکمل کیے بغیر اسے چھوڑ دیں گے،  2018ء میں لیول پلیئنگ فیلڈ نہیں ملا 4 سال پارلیمنٹ میں آواز اٹھاتے رہے۔

Share this Article
- اشتہارات -
Ad imageAd image