Sargaram | Newspaper

اتوار 03 مارچ 2024

ای-پیپر | E-paper

سانس کی بیماریوں اور دمے سےبچنے میں ’’وٹامن کے‘‘ نہایت مددگار ثابت

Share

کوپن ہیگن: وٹامن کے اگرچہ غیرمعروف ہے لیکن اس کی کمی سے دمے، سانس کے دیگر امراض اور پھیپھڑوں کی صحت متاثر ہوسکتی ہے۔ اس طرح وٹامن کے اور نظامِ تنفس کی صحت کے درمیان ایک واضح تعلق سامنے آیا ہے۔

ای آرجے اوپن سورس جرنل میں شائع رپورٹ کے مطابق اگرچہ اس تحقیق سے وٹامن کے کی روزانہ کی مقدار میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے لیکن یہ ضرور ثابت ہوا ہے کہ وٹامن کے سی او پی ڈی جیسی سانس کی بیماری روکنے میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔

وٹامن کے ہرے پتوں والی سبزیوں، سبزیجاتی تیل، سیریئلز اور مکمل اناج میں پایا جاتا ہے۔ یہ خون جمنے اور زخم بھرنے میں مدد دیتا ہے۔ لیکن اب تک پھیپھڑوں کی تندرستی کے بارے میں اس کا پہلو تشنہ تھا۔ اس ضمن میں کوپن ہیگن یونیورسٹی ہسپتال کے ماہرین نے لگ بھگ 4092 ایسے افراد کاجائزہ لیا جن کی عمریں 24 تا 77 برس تھیں۔

تمام شرکا کے پھیپھڑوں کی کارکردگی ’اسپائرومیٹری‘ کے عمل سے دیکھی گئی۔ ان کے خون کے نمونے اور دیگرٹیسٹ بھی لیے گئے۔ ان سے روزمرہ معمولات اور صحت کے بارے میں پوچھا گیا۔ بطورِ خاص وٹامن کے سے وابستہ بلڈ ٹیسٹ بھی لیے گئے۔ ماہرین نے معلوم کیا کہ جن افراد میں وٹامن کے کی کمی تھی ان کے پھیپھڑوں کی مجموعی صحت کچھ اچھی نہ تھی۔ ایسے افراد دمے اور سی او پی ڈی کے قریب پہنچ چکے تھے۔

وٹامن کے دو اہم اقسام میں پایا جاتا ہے۔ ان میں وٹامن کے ون اور کے ٹو شامل ہیں۔ وٹامن کے ون بنیادی طور پر ہرے پتوں والی سبزیوں میں پائی جاتی ہیں، جن میں پالک اور شاخ گوبھی (بروکولی) شامل ہیں۔ دوسری جانب وٹامن کے ٹو جگر، انڈے کی زردی، گوشت اور سخت پنیر میں پایا جاتا ہے۔

ماہرین نے دیکھا کہ وٹامن کے کم ہونے سے نظامِ تنفس بھی کمزور دیکھا گیا جو سانس کے مرض اور دمے کی وجہ بن سکتا ہے۔ اب اگلے مرحلے میں ماہرین مزید ہزاروں افراد پر تحقیق کا دوسرا مرحلہ شروع کریں گے۔

Share this Article
- اشتہارات -
Ad imageAd image