Sargaram | Newspaper

جمعرات 25 جولائی 2024

ای-پیپر | E-paper

غزہ پر اسرائیلی جارحیت سے شہادتوں کی تعداد 6 ہزار سے متجاوز

Share

غزہ پر اسرائیلی بمباری کا سلسلہ 19 ویں روز بھی جاری ہے جس کے نتیجے میں فلسطینی شہریوں کی شہادتوں کی تعداد 6 ہزار سے تجاوز کرگئی ہے۔

عرب میڈیا نے فلسطینی وزارت صحت کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ اسرائیلی بمباری سے اب تک 6 ہزار 55 فلسطینی شہید ہوچکے ہیں، جن میں 50 فیصد سے زائد بچے اور خواتین ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اسرائیلی جارحیت کے باعث زخمی ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 15 ہزار 143 تک پہنچ گئی ہے۔

دوسری جانب خبر رساں ادارے رائٹرز کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ رات بھر اسرائیل کی جانب سے جنوبی غزہ میں شدید بمباری کی گئی۔

اس بمباری سے ہونے والے جان نقصان کے بارے میں ابھی تفصیلات سامنے نہیں آئی ہیں۔

خیال رہے کہ 24 اکتوبر کو اسرائیلی بمباری سے 182 بچوں سمیت 704 فلسطینی شہری شہید ہوئے تھے، جو ایک دن میں سب سے زیادہ شہادتیں تھیں۔

عالمی برادری کی جانب سے اسرائیل سے حملے روکنے کا مطالبہ کیا گیا ہے تاکہ غزہ میں امداد کی فراہمی کا عمل تیز کیا جا سکے، مگر صہیونی ریاست نے ان مطالبات کو مسترد کر دیا ہے۔

یونیسیف کا اظہار تشویش

اقوام متحدہ کے ادارے یونیسیف نے غزہ میں بچوں کی شہادتوں میں اضافے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

عالمی ادارے کے مطابق 7 اکتوبر سے اب تک کم از کم 2360 بچے اسرائیلی بمباری کے باعث شہید ہو چکے ہیں۔

ادارے کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ غزہ میں بچوں کی ہلاکتوں اور زخمی ہونے کی شرح بہت زیادہ ہے اور یہ حقیقت زیادہ خوفناک ہے کہ صورتحال بہتر ہونے تک اس میں کمی آنے کا کوئی امکان نہیں۔

6 لاکھ کے قریب بے گھر فلسطینی اقوام متحدہ کے مراکز میں موجود

فلسطینی پناہ گزینوں کے لیے اقوام متحدہ کے امدادی ادارے انرا نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ غزہ میں 6 لاکھ کے قریب بے گھر افراد نے عالمی ادارے کے مراکز میں پناہ لی ہوئی ہے۔

بیان کے مطابق ہمارے مراکز میں گنجائش سے 4 گنا زیادہ افراد موجود ہیں جبک ہمتعدد افراد گلیوں میں رات گزارنے پر مجبور ہیں۔

اسرائیل کے روزانہ کروڑوں ڈالرز خرچ ہونے لگے

ادھر الجزیرہ نے ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ غزہ جنگ پر اسرائیل کے روزانہ 24 کروڑ 60 لاکھ ڈالرز خرچ ہو رہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اس میں وہ مالی نقصانات شامل نہیں جو بڑے پیمانے پر فوج کی نقل و حمل سے معیشت متاثر ہونے سے ہو رہے ہیں۔

Share this Article
- اشتہارات -
Ad imageAd image