Sargaram | Newspaper

اتوار 26 مئی 2024

ای-پیپر | E-paper

کم عمر افنان نے 160 کی اسپیڈ سے گاڑی خواتین والی گاڑی سے ٹکرائی تھی، تحقیقات میں سنسنی خیز انکشافات

Share

لاہور: ڈیفنس فیز 7 میں تیز رفتار کار کی ٹکر سے 6 افراد کی موت  کی تحقیقات میں نئے انکشافات سامنے آئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ڈیفنس فیز 7 لاہور میں تیز رفتار گاڑی کی ٹکر سے ایک ہی خاندان کے 6 افراد کی موت کے معاملے کی تحقیقات کے دوران پتا چلا ہے کہ کم عمر ڈرائیور افنان کی حادثے سے قبل جاں بحق افراد کے ساتھ جھڑپ ہوئی تھی۔

حکومتی ذرائع کا بتانا ہے کہ افنان نے وائی بلاک سے گاڑی میں بیٹھی خواتین کا کافی دیر تک پیچھا کرتا رہا، اس دوران متاثرہ گاڑی کے ڈرائیور حسنین نے کئی بار گاڑی کی رفتار بھی تیز کی کہ شاید اس طرح افنان ان کا پیچھا کرنا چھوڑ دے تاہم ملزم نے گاڑی کا پیچھا نہیں چھوڑا اور مسلسل خواتین کو ہراساں کرتا رہا۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ وائے بلاک نالے پر متاثرہ گاڑی کے ڈرائیور حسنین نے گاڑی روک کر افنان کو ڈانٹا، دوسری گاڑی سے حسنین کے والد نے بھی ملزم افنان کو سمجھایا کہ پیچھا مت کرو لیکن اس دوران ملزم افنان دھمکیاں اور گالیاں دیتا رہا۔

ذرائع نگراں پنجاب حکومت کے مطابق ملزم افنان نے دھمکیاں دیتے ہوئے کہا کہ میں دیکھتا ہوں تم لوگ ڈیفنس میں گاڑی اب کیسے چلاتے ہو اس کے بعد حسنین بہن اور بیوی کو لے کر آگے نکلا تو ملزم نے دوبارہ پیچھا شروع کر دیا، ملزم افنان نے 160 کی اسپیڈ سے گاڑی گھما کر خواتین والی گاڑی سے ٹکرا دی۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ حادثے کے بعد حسنین کی گاڑی 70 فٹ روڈ سے دور جا گری اور کار سوار  تمام افراد جاں بحق ہوگئے، حادثے کے بعد 4 افراد ملزم کو چھڑانے پہنچے لیکن لوگوں کا غصہ دیکھ کر بھاگ گئے۔

دوسری جانب نگراں وزیراعلیٰ نے  آئی جی پنجاب کو مقدمے میں دہشتگردی کی دفعات لگانے کی ہدایت جاری کی ہے، تاہم متاثرہ فیملی نے الزام لگایا ہے کہ پولیس تحقیقات میں ہمارے ساتھ اچھا تعاون نہیں کررہی۔

کم عمر ڈرائیور کی تیز رفتار کار سے 6 افراد کی موت کی تحقیقات میں یہ بھی  انکشاف ہوا کہ یہ ٹریفک حادثہ نہیں بلکہ جان بوجھ کر گاڑی کو ٹکر ماری گئی ہے۔

خیال رہے کہ یہ افسوسناک واقعہ لاہور کے علاقہ ڈیفنس میں پیش آیا تھا جہاں رفاقت علی نامی شہری اپنی فیملی کے ہمراہ بیٹی کے سسرال جا رہا تھا کہ اس دوران تیز رفتار کار ان کی گاڑی سے ٹکراگئی۔

جس سے رفاقت کی 45 سالہ بیوی رخسانہ، 27 سالہ بیٹا حسنین، 23 سالہ بہو عائشہ، 30 سالہ داماد سجاد، 4 سالہ نواسی انابیہ اور 4 ماہ کا پوتا حذیفہ شدید زخمی ہوگئے جنہیں فوری ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے 6 افراد زندگی کی بازی ہار گئے تھے۔

Share this Article
- اشتہارات -
Ad imageAd image